Top ads

دانتوں میں کیڑا لگنے کی ابتدائی علامات اور بچاؤ کے آسان طریقے

دانتوں میں کیڑا لگنے کی ابتدائی علامات اور بچاؤ کے آسان طریقے

دانتوں میں کیڑا لگنے سے بچاؤ کے طریقے

دانتوں کا مناسب خیال نہ رکھنے کی وجہ سے ہمارے دانتوں میں کیڑا لگ جاتاہے اور اگر کیڑا لگنے کے بعد بھی خیال نہیں کیا تو یہ کیڑا ایک دن بہت شدید درد کا باعث بنتا ہےاور پھردانت کے درد کی وجہ سے ہمیں ہر کام بھول جاتا ہے اور اس سے چھٹکارے کے لئےہم کڑوی سے کڑوی دواکھانے کو بھی تیارہوجاتےہیں۔انٹی بائیوٹکس اور درد کش ادویات کی وجہ سے دانت کی سوزش یا اس میں لگا کیڑا تو کم ہوجاتا ہے لیکن ساتھ ہی دیگر مسائل میں اضافہ ہوجاتا ہے جیسے معدہ کی خرابی یا مدافعتی نظام کی کمزوری۔کیا ہی اچھا ہو کہ ہمیں کوئی ایسا قدرتی طریقہ مل جائے جس میں نہ کوئی نقصان ہو اور نہ کوئی کڑوی دوائی کھانی پڑے تو آئیے آپ کو چندایک قدرتی  نسخے بتاتے ہیں لیکن اس سے پہلے ہم کیڑا لگنے کی وجوہات پر بات کریں گے۔

دانتوں میں کیڑا لگنے کی وجوہات

ہم نے یہ جملہ تقریباً ہر دوسرے فرد کے منہ سے سنا ہی ہوگا کہ دانتوں میں کیڑا لگا ہوا ہے، لیکن آپ نے کبھی سوچا ہے کہ آخر یہ کیڑا دانتوں تک پہنچتا کیسے ہے؟

یہ بھی پڑھیں گردن کی میل اور سیاہی ختم کرنے کا طریقہ

ماہرینِ طب کے مطابق جب ہم کھانا کھاتے ہیں تو ا سکے چند ٹکڑے ہمارے دانتوں میں پھنس جاتے ہیں، جب دانتوں میں پھنسے ہوئے کھانے سے منہ میں موجود بیکٹیریا آملتے ہیں تو اس کی وجہ سے دانتوں میں ’پلاک‘ جمنا شروع ہو جاتا ہےپلاک میں موجود بیکٹیریا ایک ایسا ایسڈ (تیزاب) خارج کرتے ہیں جو دانتوں کی جڑوں اور سطح کو شدید نقصان پہنچاتےہیں۔اس کا سادہ سا حل ہے کہ پلاک جمنے سے بچنے کے لیے ہر کھانے کے بعد کلّی ضرور کرلیں اور صبح و شام ٹوتھ برش کا استعمال کریں۔

دانتوں میں کیڑالگنے کی علامات

ٹھنڈا گرم لگنا

دانتوں میں کیڑا لگنے کی بہت ہی عام سی علامت یہ ہے کہ آپ کو کھاتے یا پیتے دوران ٹھنڈا گرم محسوس ہونا شروع ہو جائے۔

دانتوں کی اوپری سطح جیسے ہی متاثر ہوتی ہے ویسے ہی دانتوں میں ٹھنڈا گرم بھی محسوس ہونا شروع ہو جاتا ہے۔

میٹھا کھاتے ہوئے الگ محسوس ہونا

اگر آپ کو میٹھا کھاتے ہوئے دانتوں پر کچھ الگ یا عجیب سا محسوس ہو تو سمجھ لیجیے کہ آپ کے دانت خراب ہونا شروع ہو گئے ہیں۔

دانتوں میں تکلیف

اگر آپ کے دانتوں میں تکلیف محسوس ہونا شروع ہو جائے تو اس کا مطلب یہی ہے کہ آپ کے دانت خراب ہونا شرع ہوگئے ہیں۔

دانتوں پر داغ نمودار ہونا

کیڑا لگنے کی سب سے بڑی نشانی یہ ہے کہ دانتوں پر آہستہ آہستہ سفید رنگ کے داغ نمودار ہونا شروع ہو جاتے ہیں، دانت جتنے خراب ہوتے جائیں گے اُتنا ہی دانت کا اپنا سفید رنگ ماند پڑنا شروع ہوتا جائے گا۔

دانتوں میں سوراخ ہونا

اگر دانتوں میں دھبے نمودار ہونے کے باوجود بھی ڈاکٹر سے رجوع نہیں کرتے تو اس کے نتیجے میں دانت میں سوراخ ہونا شروع ہو جاتا ہے۔

اگر آپ کو دانتوں کے درمیان یا داڑھ میں زبان پھیرنے سے سوراخ محسوس ہو تو فوراً ڈاکٹر سے مشورہ کریں۔

دانتوں میں کیڑا لگنے سے بچاؤ کے طریقے

دانتوں میں کیڑا لگنے سے بچاؤ کے کئی ایک طریقے ہیں جن میں دواؤں کا استعمال اور قدرتی نسخوں کا استعمال شامل ہےہم یہاں دونوں کا ذکرکریں گے۔

انڈوں کے چھلکوں سے علاج

 دو عدد انڈوں کو ابال کر چھلکے اتار لیں اور مندرجہ ذیل اجزاء لیں

ناریل کا تیل : 2 کھانے کے چمچ

بیکنگ سوڈا : 1 کھانے کا چمچ اگر آپ چاہیں تو ایک چمچ سمندری نمک اور پیپر منٹ کے چند قطرے بھی شامل کرسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں بستر پر لیٹ کر موبائل استعمال کرنے کے نقصانات

ترکیب اور طریقہ استعمال

 انڈو ں کو ابال کر ان کے چھلکے اتار لیں اوران چھلکوں کو ایک کپ پانی ڈال کرپانچ سے دس منٹوں کے لیے اچھی طرح ابال لیں اور اس کے بعد خشک کرلیں۔ اب انہیں اچھی طرح پیس لیں اوراسے کسی برتن میں ڈال کر ناریل کا تیل اور بیکنگ سوڈاشامل کریں اوراچھی طرح ہلالیں۔ اسے اچھی طرح باریک اور یک جان کرکے پیسٹ بنا لیں اور اس محلول کو ضرورت کے مطابق انگلی کی مدد سے دانتوں پر لگائیں اور تمام دانتوں پر پھیلا لیں . پانچ منٹ تک لگا رہنے دیں پھر پانی سے کلی کرلیں تا کہ پیسٹ دانتوں سے صاٖ ف ہو جائے اس عمل کو چند دن تک روزانہ دہرائیں۔چند ہی دنوں میں دانت چمکدار اور کیڑے سے پاک ہو جائیں گے۔ یہ قدرتی ٹوتھ پیسٹ دانتوں میں لگے کیڑے کے لیے بہت ہی زیادہ مفید ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق انڈے کا چھلکا، کیلشیم کا بہت بڑا ذریعہ ہے اورہمارے دانت بھی کیلشیم سے بنے ہوئے ہیں،اگران چھلکوں کودانتوں کی حفاظت کے لئے ٹھیک طرح استعمال کیا جائے تو کیلشیم کی کمی کو پورا کیا جاسکتا ہے۔انڈوں کے چھلکوں کی ٹوتھ پیسٹ بہت زیادہ کارآمد اور قیمت کے لحاظ سے سستی بھی ہے اور اس ٹوتھ پیسٹ کی خاص بات یہ ہے کہ یہ بازار سے ملنے والی ٹوتھ پیسٹ کے مقابلے میں خطرناک کیمیکلز سے بھی پاک ہے۔

دانتوں میں کیڑا لگنے سے بچاؤ کے طریقے

دانتوں میں کیڑا لگنے سے بچاؤ کے طریقے

اگر آپ چاہتے ہیں کہ دانتوں میں کیڑا نہ لگے اور آپ کے دانت بھی صحت مند رہیں تو ان چند آسان طریقوں پر عمل کریں۔

 کھانے کی چند اسی عادات جو آپ کو کینسر کا مریض بنا سکتی ہیں ضرور پڑھیں

1۔ اگر آپ دانتوں کو خراب ہونے سے بچانا چاہتے ہیں تو 6 ماہ میں ایک مرتبہ دانتوں کے ڈاکٹر سے چیک اپ ضرور کروائیں۔

2۔ دانتوں کو دن میں دو مرتبہ ہلکے ہاتھوں سے اچھی طرح برش کریں، اور ایسے ٹوتھ پیسٹ کا استعمال کریں جس میں فلورائیڈ ہو۔

3۔ دن بھر زیادہ سے زیادہ پانی پئیں کیونکہ خشک منہ میں بیکٹیریا پیدا ہونے کے زیادہ خطرات ہوتے ہیں۔

4۔ سوڈا، کولڈ ڈرنکس اور جوسز کا روزانہ کی بنیادپراستعمال بندکردیں۔


نوٹ: اگر آپ چاہتے ہیں ہم آپ کے بتائے ہوئے کسی موضوع یا سوال پر لکھیں تو بلا جھجک کمنٹ سیکشن میں بیان کرسکتے ہیں ہمیں خوشی ہوگی۔


ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

close