لاک ڈاؤن کی صورت میں اپنا وقت کیسے گزاریں

لاک ڈاؤن کی صورت میں اپنا وقت کیسے گزاریں

چین سے پھیلنے والا  کرونا وائرس اس وقت  تیزی سےپوری دنیا میں پھیلتا جارہا ہے اور  دنیا بھر میں اس وائرس نے ایک وبائی صورتحال اختیار
کر لی ہے مگر اب جبکہ دنیا بھر میں کرونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے وہیں پر چین
کافی حد تک اس وبا پر قابو پا چکا ہے  اور
سننے میں آ رہا ہے کہ چین کے ڈاکٹروں نے اس وائرس کا علاج بھی دریافت کر لیا ہےاوراب
 وہاں پر اس بیماری کے نئے مریض سامنے نہیں
آرہے ہیں اور اس کے لیے چین نے جن تدابیر کا استعمال کیا اس میں سب سے اہم لاک
ڈاون تھا۔ جس میں انہوں نے متاثرہ علاقے کو چودہ دن کے لیے لاک ڈاون کر دیا تھا جس
کا فائدہ یہ ہوا کہ وائرس محدود ہو گیا۔ کچھ لوگوں کے نزدیک لاک ڈاؤن کا مطلب ہے
سب کچھ بند ہوجانے کے بعد گھر میں بیٹھ جانا۔ ایسا ہرگز نہیں ہے۔

لاک ڈاؤن کیا ہے ؟

لاک ڈاون سے مراد یہ ہے کہ حکومتی احکامات کی روشنی میں
عوام اپنی نقل و حمل کو محدود کر دیں کسی بھی قسم کے سرکاری و کاروباری ادارے نہ
کھلیں تاہم اس موقع پر ہسپتال ، میڈیکل اسٹور اور کریانے وغیرہ کی دکانیں محدود
مدت کے لیے کھل سکتی ہیں۔

پاکستان میں بڑھتے ہوئے کرونا متاثرین کو اور خصوصاً
سندھ میں مریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کے سبب سندھ حکومت نے بھی صورتحال کو کنٹرول
کرنے کے لیے جزوی لاک ڈاؤن کا اعلان کر دیا ہے۔ایسی صورتحال میں عوام کو کیا کرنا
چاہیے جس سے وہ کسی بھی پریشانی سے بچ سکیں تو اس حوالے سے کچھ ضروری باتیں بتائی
جا رہی ہیں۔

لاک ڈاؤن کی صورت میں اپنا وقت کیسے گزاریں

غذائی اجناس

چونکہ یہ واضح طور پر حکومت کی جانب سے اعلان کیا جا
رہا ہے کہ کریانے کی دکانیں اور یوٹیلٹی اسٹورز لاک ڈاؤن کے دوران بھی کھلی رہیں گی
تو اس حوالے سے بہت زیادہ راشن  کا ذخیرہ
کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ مگر اس کے باوجود خشک اشیا ءجس میں آٹا،  چاول،  دالیں وغیرہ شامل ہیں اسی طرح آئل ، چائے کی پتی،
 چینی جیسی اشیاء  بقدر ضرورت گھر میں ضرور رکھ لیں تاکہ نقل و حمل
محدود ہونے کے سبب آپ کو پریشانی نہ ہو۔

اس کے علاوہ چونکہ نقل و حمل محدود ہو گی اس لیے اس بات
کا اندیشہ ہے کہ سبزیوں کی ترسیل متاثر ہو تو اس حوالے سے یہ بہتر ہے کہ ضروری سبزیاں
جو جلد خراب نہیں ہوتی ہیں جیسے لہسن ، پیاز آلو وغیرہ محفوظ کر لیں۔ اسی طرح
ٹماٹر کا پیسٹ بنا کر زیادہ دن تک محفوظ کیا جا سکتا ہے اور مٹر بھی فریز کیے جا
سکتے ہیں۔

ادویات

بعض مرض ایسے ہوتے ہیں جن کی ادویات کا استعمال مستقل
طور پر جاری رکھنا انسانی صحت کے لیے ضروری ہوتا ہے۔ ایسی صورت میں ان ادویات کا
کم از کم ہفتہ پندرہ دن کا ذخیرہ کر لینا ضروری ہوتا ہے۔ اس کے ساتھ عام بیماریوں
کی ادویات کا بھی گھر میں ہونا ضروری ہوتا ہے فرسٹ ایڈ کا سامان بھی گھر میں رکھنا
ضروری ہے۔

لاک ڈاؤن کی صورت میں اپنا وقت کیسے گزاریں

دیگر گھریلو اشیاء

چونکہ اس لاک ڈاؤن کا خدشہ کرونا وائرس کے سبب کیا جا
رہا ہے تو اس بیماری سے محفوظ رکھنے کے لیے جن اشیا کی ضرورت ہے اس میں سب سے پہلے
صابن ،ہینڈ واش وغیرہ ضروری ہیں جس سے بار بار ہاتھ دھونا آپ کو اس خطرناک وائرس
سے محفوظ رکھ سکتا ہے۔ اس کے علاوہ گھریلو ضروریات کی دیگر اشیا جن میں سرف وغیرہ
شامل ہے گھر میں محفوظ کر لیں۔

لاک ڈاؤن کی صورت میں وقت کیسے گزاریں؟

لاک ڈاؤن حقیقت میں کوئی عام تعطیلات نہیں ہیں اس لیے
اس کو تعطیلات کی طرح پلان نہ کریں اس میں نہ تو خاندانی    گیدرنگز کا اہتمام کریں اور نہ ہی زیادہ لوگوں
سے میل جول کریں ۔ لاک ڈاؤن کے اس دور میں خود کو اپنے گھر کے افراد تک محدود کر دیں
آپ کی بے احتیاطی آپ کو اور آپ کے گھر کے دوسرے افراد کی زندگی کو خطرات سے دو چار
کر سکتی ہے۔کیوں کہ احتیاط پچھتاوے سے کئی درجہ بہتر ہے۔

لاک ڈاؤن کی صورت میں اپنا وقت کیسے گزاریں

اس دوران خود کو فٹ رکھنے کے لیے ورزش کا اہتمام کریں
اور اپنے پورے دن کے ٹائم ٹیبل کو سیٹ کریں خود کو سستی کا شکار نہ ہونے دیں اور
گھر کے اندر ہی ورزش کریں۔ اور اپنے گھر والوں کے لیے اور اپنے لیے صحت مند ایکٹیوٹیز
پلان کریں جس کے ذریعے نہ صرف آپ بلکہ آپ کے گھر والے بھی اچھا وقت گزار سکیں۔
قارئین ہماری تحریریں پڑھ کر کمنٹ ضرور کریں اور اگر آپ چاہتے ہیں ہم آپ کے بتائے گئے موضوع پر لکھیں تو بھی آپ ہمیں آگاہ کرسکتےہیں۔ آپ کی رائے کو اہمیت دی جائے گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے