Top ads

کالے بھنے چنوں کے حیران کن فوائد

کالے چنوں کے حیران کن فوائد

کالے بھنے چنوں کے حیران کن فوائد


دکانوں اور بازاروں میں عام دسیتاب چنے بڑی مفید غذا ہے۔ اسی لیے بحیرہ روم میں ساڑھے سات ہزار سال قبل اِسے بطور اناج بویا گیا۔ یہ دنیا کے قدیم ترین اناجوں میں شامل ہے۔

چنا دالوں کے خاندان سے تعلق رکھتا ہے۔ اس کی دو بنیادی اقسام ہیں:کالا چنا اور سفید چنا۔ دونوں وٹامن اور معدنیات سے بھرپور غذا ہیں۔ بھارت، پاکستان، ترکی، آسٹریلیا اور ایران میں چنا کثیر تعداد میں پیدا ہوتا ہے۔

چنا ایک دو نہیں کئی طبی فوائد رکھتا ہے غذائیت کے اعتبار سے کالے چنو ں میں وہ اجز اء وافر مقدار میں پائے جاتے ہیں جو مہنگی غذاؤں میں مو جو د ہو تے ہیں۔ مثلاً مچھلی، گو شت، فروٹ اور دو دھ وغیرہ کا لے چنوں میں پروٹین بیس فیصد،آئر ن سو لہ فیصد،فو لک ایسڈ چھ فیصد، کیلشیم پانچ فیصداور کاربو ہائیڈریٹس کی مقدار ستائیس فیصد ہے۔

اس کے علاوہ اس میں وٹامن اے اور سی بھی پائے جاتے ہیں۔ چنا ایک ریشے دار خو راک ہے۔  پروٹین ،فائبر،کیلشیم اور آئرن سے بھرپور کالے چنے صحت کے اعتبار سے بڑی اہمیت کے حامل جانے جاتے ہیں۔ ذائقہ میں بہترین اور جسمانی قوت اور توانائی کا ذریعہ ہیں۔ کالے چنے کی خوبیاں تو بے شمار ہیں لیکن چند اہم خوبیاں ہیں جنھیں جان کر آپ اپنی روزمرہ خوراک میں بھنے چنے کااستعمال ضرور شروع کر دیں گے۔





1.       قوت مدافعت میں اضافہ


بھنے کالے چنے  جہاں جسمانی قوت بڑھاتے ہیں وہاں ان کا استعمال قوت مدافعت میں بھی بے پناہ  اضافہ کرتا ہے۔ قوت مدافعت انسانی صحت کیلئے بے حد ضروری ہے  اگر آپ چاہیں تو انکے چھوٹے چھوٹے پیکٹ بنا کر ان میں منقہ یا کشمش ملا کر رکھ سکتے ہیں۔ اسکے باقاعدہ استعمال کے بعد آپکو ڈاکٹر کے پاس جانے کی ضرورت شائد نہ پڑے۔



2.       کولیسٹرول گھٹاتا ہے


جسم میں کولیسٹرول بڑھ جائے،تو امراض قلب میں مبتلا ہونے اور فالج گرنے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔کولیسٹرول کم کرنے کے لئے اگر آپ بھنے کالے چنے کا باقاعدگی سے استعمال کریں تو کولیسٹرول کے مسئلے کو آپ آسانی سے حل کر سکتے ہیں۔ اس میں موجود غذائی اجزاء فطری انداز میں کولیسٹرول کو کنٹرول رکھتے ہیں۔ کالے چنوں میں کولیسٹرول اور چکنائی کی مقدار بالکل زیرو ہوتی ہے۔




3.       ذیا بیطس میں مفید


ذیا بیطس کے مریض آسانی سے بھنے چنے کا استعمال کر سکتے ہیں کیونکہ اس میں گلیسیمک انڈکس کم ہوتا ہے۔ اسکے استعمال سے خون میں شکر کی مقدار میں توازن رہتا ہے۔اور انرجی میں بھی کمی نہیں آتی۔دراصل چنے میں فولیٹ اورمیگنیشم کی خاصی مقدار پائی جاتی ہے۔ یہ وٹامن و معدن خون کی نالیوں کو طاقتور بناتے اور انھیں نقصان پہنچانے والے تیزاب ختم کرتے ہیں۔ نیز حملہ قلب(ہارٹ اٹیک)اِمکان بھی کم ہوجاتا ہے۔



4.       بھُنے ہوئے چنے کھائیں، وزن گھٹائیں


آج کل نوجوانوں کا سب سے بڑا مسئلہ ان کابڑھا ہوا وزن ہے، جس میں کمی کے لیے وہ دن رات محنت کرتے دکھائی دیتے ہیں لیکن انہیں یہ بات بھی معلوم ہونی چاہیے کہ ورزش کے ساتھ ہی صحت مند غذا لینا بھی وزن کم کرنے کے لیے بے حد ضروری ہے۔ صحت مند غذائوں میں ’چنا‘ سر فہرست ہے۔اگر آپ شام چار بجے ایک مٹھی چنے کا استعمال روزانہ کریں تو کولیسٹرول کم کرنے کے ساتھ ساتھ وزن میں بھی بغیر کسی نقصان کے نمایاں کمی کرسکتے ہیں۔ اس میں موجود پروٹین اور آئرن موٹاپا کم کرنے کے ساتھ ساتھ اس سے ہونے والی کمزوری سے بھی بچاتا ہے۔ یعنی یہ جسمانی قوت بڑھاتے ہیں لیکن وزن نہیں۔



5.       آنتوں کی صحت


بھنے چنے کا استعمال آنتوں کی صحت کو برقرار رکھ کر انھیں کمزور ہونے سے بچاتا ہے۔یہ آنتوں میں موجود بیکٹیریا کے خاتمے کے لئے بھی فائدہ مند ہے اور اس میں موجود فائبر قبض اور نظام انہضام  کےدیگر مسائل کی روک تھام کرتا ہے۔ اس میں مو جو د فائبر معدے میں ایک جیل جیسا ما دہ پیدا کر تے ہیں جو قبض کو فوری دور کر تا ہے۔اس میں پایا جانے والا کیلشیم ہڈیو ں کی بناوٹ اور مضبو طی میں اہم کر دار ادا کر تا ہے۔




کالے چنوں کے حیران کن فوائد


6.       خواتین کی صحت


خواتین اگر بھنے چنے کااستعمال کریں تو اپنی روزمرہ کی تکالیف سے نجات حاصل کر سکتی ہیں اور جسمانی قوت میں بھی اضافہ کر سکتی ہیں۔خواتین کے پوشیدہ امراض سے نجات، وزن میں کمی اور انکی قوت مدافعت میں اضافے کے لئے بھنے چنے کا استعمال بہترین ہے۔



7.       بچوں کی نشوونما


بھنے چنے کا استعمال نہ صرف بڑوں بلکہ بچوں کے لئے بھی بہت نفع بخش ہے۔ اگر آپ اپنے بچے کی جسمانی قوت بڑھانا اور اسے بیماریوں سے محفوظ رکھنا چاہتے ہیں توبچوں کو اس میں کشمش اور مصری وغیرہ ملاکر کھلاسکتے ہیں۔




8.       کھانسی سے نجات


کھانسی کی صورت میں بھنے چنے کااستعمال بہترین ہے۔ کھانسی کے لئے بھنے کالے چنے دو چمچ، مصری ایک چمچ، کالی مرچ اور سفید مرچ آدھا آدھا چمچ لے کر پیس کر رکھ لیں۔صبح ناشتے اور رات کھانے سے دو گھنٹے پہلے کھا لیں۔ کھانسی  میں افاقہ ہوگا  ان شاءاللہ



چنوں کی ایک خاصیت یہ بھی ہے کہ اُسے کئی ماہ تک محفوظ رکھا جاسکتا ہے اور ان کی غذائیت میں کوئی کمی نہیں ہوتی۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ انھیں بھگونے کے بعد استعمال کیا جائے،تو بہتر ہے۔ یوں وہ جلد ہضم ہوجاتے ہیں۔ چنوں کو چار تا چھ گھنٹے بھگونا کافی ہے۔ بھگونے کے بعد چنے جتنی جلد استعمال کیے جائیں، بہتر ہے۔ چنے بھگوتے وقت  ان میں اگر تھوڑا سا نمک اور میٹھا سوڈا ڈال لیا جائے، تو وہ جلد گل جاتے ہیں۔



صحت کے متعلق مزید آرٹیکلز پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں۔

ایک تبصرہ شائع کریں

2 تبصرے

close